اٹلی کے قریب پناہ گزینوں کی کشتی ڈوبنے سے کئ افراد جاں بحق

اٹلی کے قریب پناہ گزینوں کی کشتی ڈوبنے سے کئ افراد جاں بحق ۔ بحیرہ روم عبور کر کے یورپ میں داخل ہونے کی کوشش کرنے والے تارکین وطن کی کشتی اٹلی کے جزیرے لمپیڈوسا کے قریب ڈوب گئی، جس کے نتیجے میں کم سے کم7 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں عالمی نشریاتی ادارے کے مطابق بدھ کے روز اٹلی کے جزیرے لمپیڈوسا سے پانچ میل دور تارکین وطن کی ایک کشتی الٹنے سے کم از کم سات افراد ڈوب کر ہلاک ہوگئے جبکہ نو افراد تاحال لاپتہ ہیں۔

تفصیلات

رپورٹ میں بتایاگیا ہے کہ کشتی میں سوار 46 افراد کو بچالیا گیا اورانہیں بحیرہ روم کے جزیرے میں بحفاظت پہنچایا گیا ہے کشتی میں سوار تارکین وطن کے حوالے سے یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ وہ کون کون سے ممالک کے شہری تھے حادثے کا شکار ہونے والی بدقسمت کشتی میں تارکین وطن سوار تھے جو سنہرے مستقبل کے خواب آنکھوں میں سجائے یورپ جانے کے لیے نکلے تھے لیکن سمندر کی بے رحم موجوں کی نذر ہوگئے۔

خیال رہے کہ ہر سال مختلف ممالک سے ہزاروں افراد خطرہ مول کر سمندر کے راستے یورپ میں داخل ہونے کی کوشش کرتے ہیں ان تارکین وطن کو اکثر اوقات حادثات کا سامنا بھی کرنا پڑتا ہیے۔

یادرہے کہ سال2020کے آخرمیں افریقی ملک سینیگال سے یورپ جانے والی ایک کشتی ڈوبنے سے 140 افراد ہلاک ہوگئے تھے کشتی میں سوار 59 افراد کو مچھیروں نے ریسکیو کرکیا تھا جبکہ ڈوبنے والے افراد میں سے 20 کی لاشیں بھی نکال لی گئیں تھیں سینیگال کے ساحل پر 200 تارکین وطن کشتی کے ذریعے یورپ جانے کا عزم لے کر نکلے تھے تاہم کشتی میں گنجائش سے زائد افراد سوار ہونے کی وجہ سے کشتی الٹ گئی تھی بدقسمت کشتی نے Zمغربی سینیگال کے ساحل سے اسپین کے کینیری آئس لینڈ جانا تھا تاہم چند گھنٹوں کے سفر کے بعد ہی سمندر میں ڈوب گئی.

قبل ازیں پچھلے سال ہی ترکی کی ایک جھیل میں کشتی ڈوبنے سے پاکستانی شہری سمیت 7 پناہ گزین ہلاک ہوگئے تھی.ترک وزیرداخلہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ وین جھیل میں ڈوبنے والی کشتی پر 71 پناہ گزین سوار تھے ان میں سے 64 پناہ گزینوں کی جان بچالی گئی تھی ترک وزیرداخلہ سلمان سویلو کے مطابق پناہ گزینوں کا تعلق پاکستان، بنگلہ دیش اورافغانستان سے تھا اسی طرح جون2020 میں قبل بنگلہ دیش سے ملائیشیا جانے والے روہنگیا پناہ گزینوں کی کشتی گہرے سمندر میں ڈوب گئی تھی جس سے کشتی میں سوار 24 مسافر جاں بحق ہوئے تھی.

کورونا وائرس کے خدشے کے پیش نظر ملائیشا جانے والی روہنگیا پناہ گزینوں کی کشتی سمندری حدود میں روکنے کے بعد واپس کھلے سمندر میں بھیج دی گئی تھی کشتی میں تقریباً 200 روہنگیا مسلمان سوار تھے جو بنگلہ دیش میں قائم پناہ گزیں کیمپوں سے ملائیشیا جارہے تھی. بنگلہ دیش کے پناہ گزیں کیمپوں میں رہائش پزیر روہنگیا مسلمان کورونا وائرس کے پھیلنے کے خدشے کے پیش نظر ملائیشیا جارہے تھے، لیکن ملائیشیا کے کوسٹ گارڈز نے کشتی کو شمالی مغربی جزیرے لنکاوی کے قریب روک دی تھی.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے