ترکی جانے والے مسافروں سے دھوکا ،سی اے اے کا ایکشن

ترکی جانے والے مسافروں سے دھوکا ،سی اے اے کا ایکشن ۔ترکی میں قرنطینہ کی شرط سے لاعلم پاکستانی مسافر بڑی مشکل میں پھنسنے لگے۔ایئرپورٹ پر گھنٹوں روکنے کے بعد درجنوں مسافروں کو ایئرپورٹ سے ڈی پورٹ کر دیا گیا۔جس کا ایکشن لیتے ہوئے پاکستانی سفارتخانے نے سول ایوی ایشن اتھارٹی سے رابطہ کیا سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ایئر لائنز کو خبردار کردیا۔

تفصیلات

تفصیلات کے مطابق سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ترکی کے لیے آپریٹ کرنے والی ایئرلائنز کو خبردار کر دیا ہے۔سخت گائیڈلائنز جاری کرنے کے ساتھ ایئرلائنز کو خبردار کیا گیا ہے کہ وہ بکنگ کے وقت مسافروں کو ترکی میں قرنطینہ کی شرط اور متوقع اخراجات (2000 یو رو) سے آگاہ کریں ۔

اس کے ساتھ ساتھ بورڈنگ سے پہلے مسافروں سے تحریری رضامندی بھی حاصل کی جائے اور سول ایوی ایشن کے پاس جمع کرائی جائے ۔ان ہدایات پر عمل نہ کرنے والی ایئرلائنز پر پابندی دی اور جرمانے کے ساتھ ساتھ دیگر کارروائی بھی کی جائے گی ۔

قرنطینہ کی شرط

یاد رہے کہ ترکی نے یکم جولائی سے پاکستانی مسافروں کے لیے دس روز قرنطینہ کی شرط عائد کر رکھی ہے۔پاکستانی مسافروں کو ترکی پہنچنے پر ترک حکومت کے منتخب کردہ ہوٹلوں یا ترک حکومت کی سرکاری رہائش گاہوں میں دس روز کے لئے قرنطینہ ہونا ہوگا۔تاہم کس مسافر کو ہوٹل اور کس کو سرکاری رہائش گاہ میں بیچنا ہے اس کا فیصلہ ترک حکام ایئرپورٹس پر کریں گے۔

استنبول میں کونسلر جنرل بلال پاشا نے بتایا کہ دس روز ہوٹل میں قرنطینہ کا خرچہ فی کس دو ہزار یورو ہوتا ہے۔ قرنطینہ میں رہنے والوں کا ساتھ روز کے بعد ٹیسٹ کیا جاتا ہے۔اور نتیجہ کلیئر آنے کی صورت میں پاکستانی قرنطینہ سے نکل سکتا ہے۔تاہم سفارتخانے کی تعداد کے مطابق ترک ہوٹل کرینہ کے دس روز کے پورے دو ہزاریورو وصول کر رہے ہیں۔

امتحانی نے مسافروں سے کہا کہ وہ ترکی سفر کرنے سے پہلے تمام معلومات حاصل کر لیں تاکہ انہیں مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔پاکستانی مسافروں کو چاہیے کہ وہ قرنطینہ اخراجات کے لیے تیار ہوکر آ ئیں۔گزشتہ چند روز میں 120 افراد کو قرنطینہ اخراجات مکمل نہ ہونے کے باعث ائیرپورٹ سے ڈی پورٹ کیا جاچکا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے