جرمنی میں پابندیاں کب ختم ہونگی، وزیر نے بتا دیا۔

جرمنی میں پابندیاں کب ختم ہونگی، وزیر نے بتا دیا۔ کرونا وائرس سے ساری دنیا ہی پریشان ہے اور ہر شخص اس سے چھٹکارا حاصل کرنے کا خواہش مند نظر آتا ہے۔ جرمنی میں کرونا وائرس اور اس سے منسلک پابندیاں کب ختم ہوں گی اس حوالے سے جرمنی کے وزیر صحت کا اہم بیان سامنے آیا ہے۔اس بیان کے ساتھ ہی ویکسین نہ لگوانے والوں کے لیے لیے بہت سی سہولیات ختم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

تفصیلات

تفصیلات کے مطابق جرمن وزیر صحت کا کہنا ہے کہ اگر کرونا کا کوئی نیا اور ایسا وائرس سامنے نہ آیا جو ویکسین کے خلاف مزاحمت رکھتا ہو تو جرمنی میں اگلے موسم بہار(یعنی اپریل) تک کرونا وبا کا خاتمہ ہوجائے گا۔اور زندگی دوبارہ معمول پر آ جائے گی۔ ایک انٹرویو کے دوران جرمن وزیر صحت کا کہنا تھا کہ اجتماعی قوت مدافعت پیدا کرنے کے لیے ہمیشہ لمبا عرصہ درکار ہوتا ہے۔اصل سوال یہ ہے کہ اجتماعی قوت مدافعیت ویکسین کے ذریعے حاصل کی جائے یا وائرس کے پھیلاؤ کے ذریعے، اس سوال کے جواب کے لیے ویکسین ہی محفوظ ترین طریقہ ہے۔اس لیے ضروری ہے کہ جن جرمن شہریوں نے ویکسین نہیں لگوائی وہ بھی جلد از جلد یہ لگوا لیں۔

انہوں نے کہا کہ فی الوقت جرمنی میں وائرس کے پھیلاؤ کی شرح کم ہے لیکن ہمیں یاد رکھنا چاہیے کہ موسم سرما کے ساتھ ہی اس میں اضافے کا خدشہ ہے جیسا کہ پچھلے سرما میں دیکھا گیا تھا۔

ویکسین نہ لگوانے والوں کے لیے نئے احکامات

دوسری جانب حکومت جرمنی نے ویکسین نہ لگوانے والوں کے لئے بہت سی سہولیات ختم کرنے کا اعلان کیا ہے ۔جس کا مقصد یہ ہے کہ لوگوں کو ویکسین لگوانے کی جانب راغب کیا جا سکے۔حکومت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اکتوبر سے ایسے افراد کے لیے مفت کرونا ٹیسٹ کی سہولت ختم کر دی جائے گی۔اور انہیں ریپیڈ ٹیسٹ کے لیے بھی رقم بھرنا پڑے گی۔

اسی طرح یکم نومبر سے ان ورکرز کو قرنطینہ کے دوران تنخواہ دینا بند کر دی جائے گی جنہوں نے ابھی تک ویکسین نہیں لگوائی۔واضح رہے کہ جرمنی میں اگر کوئی شخص کرونا میں مبتلا ہوتا ہے تو اسے پانچ دن کے لئے قرنطینہ کیا جاتا ہے جس کی اسے تنخواہ ملتی ہے۔جرمنی میں اب تک 63 فیصد آبادی ویکسین لگوا چکی ہے۔جو حکومت کے مقرر کردہ 85فیصد کے ہدف سے کافی نیچے ہے۔

یاد رہے کہ دیگر یورپی ممالک میں بھی ویکسین نہ لگوانے والوں کے لیے پابندیاں سخت کی جارہی ہیں تاکہ انہیں ویکسین لگوانے کی جانب راغب کیا جا سکے۔اٹلی میں بھی حکومت نے ویکسین نہ لگوانے اور کرونا ٹیسٹنگ نہ کروانے والوں کے خلاف سخت پابندیوں کے قانون کی منظوری دی ہے۔جس کے مطابق گرین پاس نہ رکھنے والے افراد ملازمت بھی نہیں کر سکیں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے