جرمن الیکشن کے ابتدائی نتائج، کیا تاریخ بدلنے جا رہی ہے؟

جرمن الیکشن کے ابتدائی نتائج، کیا تاریخ بدلنے جا رہی ہے؟ جرمنی میں عام انتخابات کے ابتدائی نتائج کے مطابق سوشل ڈیموکریٹک پارٹی نے سبقت حاصل کرلی ہے۔ کرسچن ڈیموکریٹک پارٹی کے مقابلے میں انہیں دو فیصد ووٹوں کی برتری حاصل ہے۔

تفصیلات


جرمنی میں عام انتخابات کے ابتدائی نتائج کے مطابق صورتحال غیر واضح ہے، دونوں اہم پارٹیاں یورپ کی سب سے بڑی معیشت کی قیادت کے دعوے کررہی ہیں۔ الیکشن کے دوران کانٹے کے مقابلے میں دونوں اہم جماعتیں کامیابی کے دعوے کررہی ہیں لیکن یہ سوال بہر حال برقرار ہے کہ انگیلا میرکل کی جانشینی کون سنبھالے گا۔

جرمنی کے الیکشن کمیشن کی ویب سائٹ کے مطابق ابتدائی نتائج میں سوشل ڈیموکریٹک پارٹی (ایس پی ڈی) کو سب سے زیادہ 25.7 فیصد ووٹ حاصل ہوئے ہیں۔ چانسلر انگیلا میرکل کی قدامت پسند جماعت سی ڈی یو – سی ایس یو اتحاد کو اب تک صرف24.1 فیصد ووٹ مل سکے ہیں۔ یہ گزشتہ سات عشروں میں اس کی اب تک کی سب سے بدترین کارکردگی ہے۔ گرین پارٹی 14.8فیصد ووٹوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے۔ وفاقی ریٹرننگ آفیسر کی طرف سے جلد ہی باضابطہ اعلان کیے جانے کی توقع ہے۔

یورپ کی نگاہیں نتائج پر

ایس پی ڈی کے چانسلر کے امیدوار، وزیر خزانہ اور نائب چانسلر اولاف شولس بئاور میرکل کی کنزرویٹیو پارٹی کے آرمین لاشیٹ دونوں نے ہی نئی حکومت کے لیے مینڈیٹ حاصل ہونے کے دعوے کیے ہیں۔ دونوں جماعتیں حکومت سازی کے لیے اپنے اپنے دعووں کو مضبوط کرنے کے لیے ممکنہ اتحادی پارٹنرس تلاش کررہی ہیں۔

جرمنی، جہاں چانسلر انگیلا میرکل کی شاندار قیادت میں 16برسوں تک سیاسی استحکام رہا، میں آنے والے ہفتوں اور مہینوں کے دوران سیاسی اتھل پتھل دیکھنے کو مل سکتی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے