جرمن وزیر خارجہ کا مدد کے لیے پاکستان سمیت پانچ ملکوں کا دورہ

جرمن وزیر خارجہ کا مدد کے لیے پاکستان سمیت پانچ ملکوں کا دورہ ۔ افغانستان سے جرمن اور افغانوں کو نکالنے کے مشن کو ختم کرنے کے بعد جرمنی اب وہاں پھنسے ہوئے باقی ماندہ لوگوں کو نکالنے کے لیے کوششوں میں لگا ہوا ہے۔

تفصیلات

جرمن وزیر خارجہ پاکستان سمیت پانچ ممالک کے دورے پر روانہ ہو گئے ہیں۔
جرمن وزیر خارجہ ہائیکو ماس آج اتوار 29 اگست کو پانچ ممالک کے دورے پر روانہ ہو گئے ہیں۔ ہائیکو ماس اس دورے کے دوران پاکستان سمیت ان ممالک جائیں گے جو افغانستان میں پھنسے افراد کو وہاں سے نکالنے میں مدد کر سکتے ہیں۔

جرمن فوج نے تین روز قبل ہی افغانستان میں پھنسے افراد کو نکالنے کا اپنا مشن ختم کیا ہے۔ 15 اگست کو طالبان کی طرف سے کابل کا کنٹرول حاصل کرنے کے بعد سے جرمنی نے وہاں پھنسے 5,347 افراد کو نکالا ہے۔ ان افراد کا تعلق 45 مختلف ممالک سے تھا جنہیں انتہائی مشکل حالات میں افغانستان سے باہر منتقل کیا گیا۔

10 ہزار سے زائد افراد اب بھی جرمنی کی طرف سے انخلا کے منتظر
کابل میں پھنسے افراد کو نکالنے کے لیے جرمن فوج کے آپریشن کے خاتمے کے باوجود ابھی تک 10 ہزار سے زائد افراد ایسے ہیں جو جرمن وزارت خارجہ کی اس فہرست میں شامل ہیں جنہیں افغانستان سے نکالا جانا ہے۔ ان میں 300 جرمن شہری بھی شامل ہیں
جرمن فوج نے جمعرات 26 اگست کو افغانستان میں پھنسے افراد کو نکالنے کا اپنا مشن ختم کیا ہے۔
جمعرات 26 اگست کو جرمن فوج کے مشن کے خاتمے کے موقع پر وزیر خارجہ ہائیکو ماس نے کہا تھا، ”انخلا کا فوجی آپریشن تو ختم ہو گیا ہے مگر ہمارا کام جاری رہے گا اور اس وقت تک جاری رہے گا جب تک ہر وہ شخص جس کی ذمہ داری ہم پر عائد ہوتی ہے، وہ محفوظ نہیں ہو جاتا۔‘‘

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے