دوحہ سے آنے والے 30 مسافروں میں کورونا کی تصدیق

دوحہ سے آنے والے 30 مسافروں میں کورونا کی تصدیق ہو گئی ۔
ضلعی انتظامیہ کی مدد سے مسافروں کو قرنطینہ کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

تفصیلات

خلیجی ملک قطر کے دارالحکومت دوحہ سے پشاور آنے والے 30 مسافروں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ، ضلعی انتظامیہ کی مدد سے مسافروں کو قرنطینہ کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق مسافر نجی ایئر لائن کی پرواز کے ذریعے دوحہ سے پشاور پہنچنے ، پشاور ایئرپورٹ پر مسافروں کے ریپڈ ٹیسٹ کیے گئے اور 30 مسافروں میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی۔
یہاں قابل ذکر بات یہ ہے کہ ملک میں کورونا کی چوتھی لہر کا زور ٹوٹنے لگا اور مثبت کیسز کی شرح 4 فیصد سے بھی کم ہوگئی ، پاکستان میں عالمی وبا کورونا وائرس سے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 42 افراد جاں بحق ہوئے جس کے ساتھ ہی ملک میں عالمی وباء سے ہونے والی مجموعی اموات کی تعداد 27 ہزار566 ہو گئی اس کے علاوہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں مزید ایک ہزار780 کورونا کیسز رپورٹ ہوئے جس کی وجہ سے ملک میں کورونا کیسز کی مجموعی تعداد 12 لاکھ 38 ہزار668 ہوگئی ، گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں مجموعی طور پر 44 ہزار 712 کورونا ٹیسٹ کیے گئے جن میں سے مثبت کیسز کی شرح 3 اعشاریہ 98 فیصد رہی۔

ادھر عالمی ادارہ صحت کی کورونا سے نمٹنے کیلئے پاکستان کے اقدامات کی تعریف کی ہے،پاکستان میں کنٹری سربراہ پلیتھا ماہی پالا نے کہا کہ پاکستان میں مکمل ویکسین یافتہ افراد کی تعداد 20 فیصد سے زائد ہوچکی ، دنیا میں بعض ممالک میں 2 فیصد آبادی کو بھی ویکسین نہیں لگائی گئی، پاکستان میں احتیاطی تدابیر کے باعث ڈیلٹا کیسز اور شرح اموات میں کمی رہی، اسمارٹ لاک ڈاؤ ن کی حکمت عملی کامیاب رہی ، اس کے علاوہ پاکستان میں احتیاطی تدابیر کے باعث ویکسین کم ہونے کے باوجود کیسز کم رہے۔
میڈیا بریفنگ میں انہوں نے کہا کہ دنیا میں ایسے ممالک بھی ہیں جہاں 2 فیصد آبادی کو بھی ویکسین نہیں لگائی گئی، پاکستان ویکسین لگانے میں بہتر کارکردگی دکھا رہا ہے، پاکستان ایک روز میں 10 لاکھ ویکسین خوراکیں لگا رہا ہے، پاکستان کی ویکسین لگانے کی مہم انتہائی تیز اور مئوثر ہے، پاکستان میں مکمل ویکسی نیشن یافتہ افراد کی تعداد 20 فیصد سے زائد ہوچکی ہے، اسی طرح پاکستان میں جزوی ویکسی نیشن والوں کی تعداد 40 فیصد سے زائد ہوچکی ہے، اس کے برعکس دنیا میں ایسے ممالک بھی ہیں جہاں ویکسین وافراور ویکسی نیشن زیادہ ہونے کے باوجود کورونا کیسز کی تعداد زیاد ہ ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے