روس اور ترکی میں دفاعی تعاون کے معاہدے

روس اور ترکی میں دفاعی تعاون کے معاہدے طے پانے کا امکان۔ ترک صدر رجب طیب اردوان اور روسی صدر پیوٹن کے درمیان لڑاکا طیاروں اور آبدوزوں پر تعاون سے متعلق بات چیت ہوئی ہے۔

ترک صدر نے کہا ہے کہ روس کے ساتھ لڑاکا طیاروں، آبدوزوں سمیت مزید مشترکہ دفاعی صنعت کے اقدامات پر غور کررہے ہیں۔

اردوان نے روس سے ترکی واپسی پر صحافیوں سے گفتگو کی، جس میں انہوں نے کہا کہ انہوں نے روس کے ساتھ دو مزید ایٹمی بجلی گھروں کی تعمیر پر کام کرنے کی تجویز دی ہے جبکہ صدر پیوٹن نے خلائی راکٹ لانچ کرنے کیلئے پلیٹ فارم تیار کرنے کی تجویز دی ہے۔

صدر اردوان نے روسی دفاعی نظام ایس 400 کی خریداری کا ذکر نہیں کیا لیکن کہا کہ ترکی اس سے پیچھے نہیں ہٹے گا۔

صدر اردوان نے کہا کہ اگلے ماہ ان کی امریکی صدر جو بائیڈن سے متوقع ملاقات میں فوجی، سیاسی اور معاشی تعلقات پر بات ہوگی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے