مسجد میں شوٹنگ کا معاملہ منیجر اوقاف معطل

مسجد میں شوٹنگ کا معاملہ منیجر اوقاف معطل۔ سیکرٹری اوقاف نے مسجد وزیر خان میں گانے کی شوٹنگ پر منیجر اشتیاق احمد کو معطل کر دیا۔ اس حوالے سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ منیجر نے اپنے فرائض میں غفلت برتی ہے جس پر انہیں معطل کر دیا گیا۔

دوسری جانب گلوکار بلال سعید اور اداکارہ صبا قمر نے وضاحت دیتے ہوئے لوگوں کی دل آزاری ہونے پر معافی مانگ لی ۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اداکارہ صبا قمر نے گانے کا ٹیزر جاری کرتے ہوئے لکھا کہ شُوٹنگ کے دوران مسجد کی انتظامیہ بھی موجود تھی اور وہ گواہ ہے کہ وہاں کسی قسم کی کوئی موسیقی نہیں چلائی گئی۔

یہ ویڈیو کا وہ واحد حصہ ہے جو تاریخی وزیر خان مسجد میں فلمایا گیا تھا جس میں نکاح کا منظر پیش کیا گیا ۔جو ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل کی گئی ہے وہ ’’قبول‘‘ کے پوسٹر کے لیے محض ایک کلک تھا جس میں شادی شدہ جوڑے کو ان کے نکاح کے بعدخوشی سے دکھایا گیا تھا۔صبا نے کہا کہ اس کے باوجود اگر ہم نے انجانے میں کسی کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی ہے تو ہم تہہِ دل سے آپ سب سے معذرت خواہ ہیں۔

گلوکار بلال سعید نے بھی وضاحت دیتے ہوئے کہا کسی نتیجے پر پہنچنے سے پہلے براہ کرم ویڈیو دیکھیں۔ ہم سب مسلمان ہیں، ہمارے دل میں بھی اپنے مذہب اسلام کے لیے اتنی ہی محبت اور احترام ہے جتنا آپ سب کے دل میں ہے اور کبھی بھی اس کی توہین کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتے ۔تاہم وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ ہمارے فنکار دیدہ دلیری سے جھوٹ بول رہے ہیں۔

انہوں نے سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیو ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے صبا قمر اور بلال سعید کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا یہ محترمہ صبا قمر فرما رہی ہیں کہ مسجد میں صرف نکاح کا سین شوٹ کیا تھا۔ فنکار اور ادیب معاشرے میں اخلاقیات کو پروان چڑھاتے ہیں۔ ہمارے تو چند فنکاربھی دیدہ دلیری سے جھوٹ بولتے ہیں۔مسجد کی بے توقیری کسی صورت قبول نہیں۔ مسجد فوٹو شوٹ کے لیے نہیں بلکہ اللہ کی عبادت اور سماجی بہبود کے کاموں کے لیے استعمال ہونی چاہیے ۔ ادھر اس حوالے سے اداکارہ صبا قمر، گلوکاربلال سعید اور محکمہ والڈ سٹی کو لیگل نوٹس بھی بھجوا دیا گیا جس میں ان سے 15 دن میں عوام سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے