موسمیاتی تبدیلیوں کے تباہ کن نتائج، شدید گرمی کا 30 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

موسمیاتی تبدیلیوں کے تباہ کن نتائج، شدید گرمی کا 30 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا ۔ تفصیلات کے مطابق گلوبل وارمنگ کی وجہ سے عالمی موسمیاتی تبدیلیوں کے تباہ کن نتائج سامنے آنے لگے ہیں۔ سعودی گیزٹ میں شائع کردہ رپورٹ کے مطابق مئی 2021 میں گرم ترین موسم کے تمام ہی ریکارڈ ٹوٹ گئے۔
گزشتہ 30 سالوں کے دوران 2021 کا مئی کا مہینہ زیادہ گرم مہینہ ثابت ہوا۔ جاری تشویش ناک رپورٹ کے مطابق مئی 2021 میں 1991 کے بعد کسی بھی مئی کے ماہ میں تشویش ناک اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔ یورپ اور کینیڈا جیسے ریجن جو سرد موسم کیلئے مشہور ہیں، ان علاقوں میں بھی درجہ حرارت میں اضافہ دیکھنے میں آیا

ناک اضافہ ہوا، گزشتہ 5 سال بھی انسانی تاریخ کے سب سے گرم ترین سال قرار دیے گئے ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ گزشتہ کچھ روز سے بحر الکاہل کے شمال مغربی علاقے بدستور شدید گرمی کی لپیٹ میں ہیں۔ کینیڈین علاقے لِیٹن میں دو روز قبل درجہ حرات 49.5 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔میڈیارپورٹس کے مطابق امریکی ریاست اوریگن میں شدید گرمی کی لہر سے 60 انسانوں کی موت ہوئی۔ کینیڈین صوبے برٹش کولمبیا میں گرمی سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 486 ہو گئی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ یہ وہ علاقے ہیں جہاں کبھی اتنی گرمی نہیں پڑی۔ اس تمام صورتحال میں دنیا کی بڑی معاشی طاقتوں سے اپیل کی گئی ہے کہ گلوبل وارمنگ اور موحولیاتی آلودگی کو کنٹرول کرنے کیلئے پیرس میں 2015 میں ہوئے معاہدے پر عمل کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے